Prevention of Copy Paste


  • تازہ اشاعتیں

    جمعہ, جولائی 22, 2016

    اکثر آواز بند یا بیٹھ کیوں جاتی ہے؟




    آواز کا بند ہونا ورم حنجرہ (laryngitis)- نرخرے یا حنجرہ کی سوزش کی ایک علامت ہے۔ اس کا سبب اکثر وائرس ہوتے ہیں، تاہم یہ مضر مادہ جیسا کہ سگریٹ کے دھوئیں کے زیادہ استعمال سے ہونے والے نقصان کا نتیجہ بھی ہو سکتا ہے۔ نرخرا ایک کھوکھلا عضو ہوتا ہے جو منہ اور ناک کے پچھلے حصّے (حلقوم) کو سانس لینے کی نالی (ہوا کی نالی) کو جوڑتا ہے۔ اس میں جھلی کی دو تہیں ہوتی ہیں، صوتی نالی، جو اس وقت مرتعش ہوتی ہے جب ہوا گزرتی ہے۔ عام طور پر صوتی نالی لچک دار ہوتی ہے، جو مختلف انواع کی آوازوں کو پیدا کرنے میں مدد دیتی ہے، تاہم اگر یہ سوج جائے، تو وہ پھول کر سخت ہو جاتی ہے۔ ان اکڑی ہوئی تہوں کو مرتعش کرنے کے لئے ہوا کو عام حالت کے مقابلے میں زیادہ دباؤ سے قوت لگانی ہوگی، جس سے آواز بیٹھی ہوئی کھینچی سی ہو جاتی ہے۔ کچھ صورتوں میں لوگ اپنی صوتی نالی کے لئے درکار دباؤ کو نہیں پیدا کر سکتے اس طرح ان کی آواز مکمل طور پر بیٹھ جاتی ہے۔
    • بلاگر میں تبصرے
    • فیس بک پر تبصرے

    0 comments:

    Item Reviewed: اکثر آواز بند یا بیٹھ کیوں جاتی ہے؟ Rating: 5 Reviewed By: Zuhair Abbas
    Scroll to Top