Prevention of Copy Paste


  • تازہ اشاعتیں

    منگل, جولائی 19, 2016

    فوق تشاکل تاریک مادّہ



    فوق تشاکل کے پیش کردہ ذرّات پر ایک نظر دوڑائیں تو معلوم ہوگا کہ کافی امیدوار ایسے ہیں جن کی تعریف صرف تاریک مادّے سے ہی ہو سکتی ہے۔ ان میں سے ایک نیوٹرالینو ہے، ذرّات کے خاندان کا وہ رکن جو فوٹون کا فوق رفیق ہے۔ نظری طور پر نیوٹرالینو اعداد و شمار میں فٹ بیٹھتا نظر آتا ہے۔ نہ صرف یہ معتدل بار رکھتا ہے بلکہ اسی وجہ سے یہ غیر مرئی بھی ہوتا ہے اور ضخیم بھی (لہٰذا اس پر قوّت ثقل کا ہی اثر ہوتا ہے) اور یہ پائیدار بھی ہے۔ (اس کی وجہ یہ ہے کہ یہ اس خاندان میں کسی بھی ذرّے کے مقابلے میں سب سے کم کمیت رکھتا ہے لہٰذا یہ انحطاط پذیر ہو کر کسی دوسرے ذرّے میں تبدیل نہیں ہوتا۔) آخری تاہم سب سے اہم بات کائنات کو نیوٹرالینو سے لبریز ہونا چاہئے، جس کی وجہ سے یہ تاریک مادّے کے لئے ایک مثالی ذرّہ ہے۔

    نیوٹرالینو کا ایک زبردست فائدہ بھی ہے ، یہ اس بھید سے بھی پردہ فاش کر سکتے ہیں کہ آیا کیوں تاریک مادّہ ، مادّے اور توانائی کی کل مقدار کا 23 فیصد ہے جبکہ ہائیڈروجن اور ہیلیئم صرف 4 فیصد ہیں۔

    یاد کریں کہ جب کائنات صرف 380 ہزار برس کی تھی تو درجہ حرارت اتنا گر گیا تھا کہ جوہر بگ بینگ سے پیدا ہوئی شدید حرارت کی وجہ سے ہونے والے تصادموں سے مزید ریزہ ریزہ نہیں ہو رہے تھے۔ اس وقت پھیلتی ہوئی آگ کی گیند ٹھنڈی ، کثیف اور پائیدار ہو کر مکمل جوہر بنانا شروع ہو گئی تھی۔ آج جوہروں کی فراوانی لگ بھگ اسی زمانہ سے تعلق رکھتی ہے۔ سبق یہ ملا کہ کائنات میں مادّے کی مقدار اسی وقت سے تعلق رکھتی ہے جب کائنات اتنی ٹھنڈی ہو گئی تھی کہ مادّہ پائیدار ہو سکتا تھا۔

    یہی دلیل نیوٹرالینو کی فراوانی کے لئے استعمال کی جا سکتی ہے۔ بگ بینگ کے تھوڑی عرصے بعد درجہ حرارت اتنا جھلسا دینے والا گرم تھا کہ نیوٹرالینو بھی تصادم کی وجہ سے تباہ ہو رہے تھے۔ تاہم جب کائنات ٹھنڈی ہونی شروع ہوئی تو کسی وقت درجہ حرارت اتنا گر گیا کہ نیوٹرالینو تباہ ہوئے بغیر باقی رہ گئے۔ نیوٹرالینو کی فراوانی اسی دور سے تعلق رکھتی ہے۔ جب ہم یہ حساب لگاتے ہیں تو ہمیں معلوم ہوتا ہے کہ نیوٹرالینو کی فراوانی جوہروں سے کہیں زیادہ تھی اور اصل میں یہ لگ بھگ آج تاریک مادّے کی فراوانی کے ہی قریب ہے۔ فوق تشاکل ذرّات اس لئے توجیح پیش کرتے ہیں کہ آیا کیوں کائنات میں تاریک مادّے کا غلبہ ہے۔
    • بلاگر میں تبصرے
    • فیس بک پر تبصرے

    0 comments:

    Item Reviewed: فوق تشاکل تاریک مادّہ Rating: 5 Reviewed By: Zuhair Abbas
    Scroll to Top